Ghazal

مرا دل نکل جائے گا بس سے میرے

مرا دل نکل جائے گا بس سے میرے
حجاب ان کے چہرے سے جب بھی ہٹے گا
لگا رونے جومیت پر میری آ کر
اسی نے کہا تھا توں جل کر مرے گا
بغاوت کے دریا سے جب بھی اٹھی لہر
بلندی و پستی پہ کچھ بھی بچے گا؟
نکل کر کتابوں سے آنا کبھی تم
حقیقت کا افسانہ تمہیں ملے گا

Advertisements

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s