Ghazal

دسمبر میں

کچھ تو رکھ لو بھرم دسمبر میں
لوٹ آئو صنم دسمبر میں
اب تو اس نام سے ہی ڈرتا ہوں
ڈھا ئے گئے یوں ستم دسمبر میں
رات آئے وہ یوں تصور میں
ہو گیا اک کرم دسمبر میں
یہ کیا ہو گیا ہے شاہیں
ہو ئے شاعر ہو تم دسمبر میں
Advertisements

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s