Ghazal

yaar k naam

موروں جیسی چال
ریشم جیسے بال
پھولوں جیسے گال
کچھ ہیں لب بھی لال
اس کے وہ خدوخال
ہاتھوں میں رومال
اوڑھے ہوئے ہے شال
کچھ یوں پھینکا جال
تھی ظالم کی چال
ہنس کے پوچھا حال
تب سے ہم بے حال
اب اس کا ہی خیال
لو اک اور جنجالyaar

Advertisements

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s